Search Reading Corner

Sunday, April 9, 2017

Humqadam Episode 3 novel by Nasir Hussain




Free online reading Hamqadam Episode 3 novel by Nasir Hussain

گزشتہ قسط کا خلاصہ:
ایمان علی نام کی لڑکی کی شادی شہزاد نام کے لڑکے کے ساتھ ہونے والی ہوتی ہے مگر وہ اسے نا پسند کرتی ہے اور شادی والی رات ہی چپکے سے بهاگ جاتی ہے..وہ اپنے بوائے فرینڈ عارم سے مل کر اسے شادی کا کہتی ہے مگر وہ اسے عین وقت پہ دهوکہ دے جاتا ہے..پهر وہ اچانک سنسان سڑک پہ بے سائبان ہوجاتی ہے اور خودکشی کی کوشش کرتی ہے وہیں اس کی ملاقات ساحل نامی ایک لڑکے سے ہوتی ہے وہ اسے اپنی گاڑی میں بٹهاتا ہے،لیکن ایک مجبوری کے تحت ان دونوں کو نکاح کرنا پڑتا ہے .اور ساحل اسے اپنے گهر لے جاتا ہے..لیکن ایمان علی کے قدموں تلےسے زمین نکل جاتی ہے جب اسے پتا چلتا ہے وہ عارم کا بهائی ہے ...عارم اسے دهمکی دیتا ہے کہ وہ اسے اپنے گهر سے نکال کر ہی رہے گا وہ عارم سے نہیں ڈرتی اور اسے چیلنج کرتی ہے کہ اسے جو کرنا ہے وہ کرے..اور اس پہ ایک نیا انکشاف بھی ہوتا ہے کہ ساحل کی شادی اس کی پهپهو کی بیٹی سمرہ سے ہونے والی ہوتی ہے...اور وہ دونوں صبح کے وقت باتیں کر رہے ہوتے ہیں تب ساحل ایمان کو منع کرتا ہے کہ وہ گهر میں کسی کو نہیں بتائے گی کہ ان دونوں کا نکاح ہو چکا ہے. ..باتوں کے دوران ہی انہیں پتا چلتا ہے کہ سمرہ دروازے پہ کهڑی ہے..وہ دونوں حواس باختہ ہو کر اسے دیکهنے لگتے ہیں جانے وہ کتنی باتیں سن چکی تهی....... اب آگے ملاحظہ فرمائیں. ....

Humqadam novel by Nasir Hussain


is famous social, romantic Urdu novel.

It was published on group of Prime Urdu Novels online.

Nasir Hussain is new writer and its his first novel which


is being written for us Humqadam by Nasir Husain Part 3


is available to download and online reading. Click the


links below to download free online books,or free online

reading this novel. For better result click on the image.


Click the link below to download.

Download Link ( Mediafire )

 

Humqadam novel by Nasir Hussain


OR


Humqadam novel by Nasir Hussain


OR

Humqadam novel by Nasir Hussain

 

OR


Humqadam novel by Nasir Hussain


ONLINE READING


Free online reading Hamqadam Episode 3 novel by Nasir Hussain


CLICK ON READ MORE TO CONTINUE READING



No comments:

Post a Comment